عدنان مسعود کی سخن آرایاں۔ دروغ برگردن قاری

نعت رسول مقبول صلی اللہ علیہ وسلم

کسی غمگسار کی محنتوں کا یہ خوب میں نے صلہ دیا
کہ جو میرے غم میں گھلا کیا اسے میں نے دل سے بھلا دیا
جو جمال روئے حیات تھا، جو دلیل راہ نجات تھا
اسی راہبر کے نقوش پا کو مسافروں نے مٹا دیا
میں تیرے مزار کی جالیوں ہی کی مدحتوں میں مگن رہا
تیرے دشمنوں نے تیرے چمن میں خزاں کا جال بچھا دیا
تیرے حسن خلق کی اک رمق میری زندگی میں نہ مل سکی
میں اسی میں خوش ہوں کہ شہر کے دروبام کو تو سجا دیا
تیرے ثور و بدر کے باب کے میں ورق الٹ کے گزر گیا
مجھے صرف تیری حکایتوں کی روایتوں نے مزا دیا
کبھی اے عنایت کم نظر! تیرے دل میں یہ بھی کسک ہوئی
جو تبسم رخ زیست تھا اسے تیرے غم نے رلا دیا
Share

2 Comments to نعت رسول مقبول صلی اللہ علیہ وسلم

  1. February 15, 2011 at 4:07 pm | Permalink

    جو جمال روئے حیات تھا، جو دلیل راہ نجات تھا
    اسی راہبر کے نقوش پا کو مسافروں نے مٹا دیا
    صلی اللہ علیہ وسلم

    ہمیں تجدید وفا کرنی ہے ۔ اپنے اپ سے۔ اپنے مسلمان ہونے کے ناطے اپنے اسلامی اخلاق سے۔

  2. سلیمان's Gravatar سلیمان
    February 16, 2011 at 6:18 am | Permalink

    فنی لطافتوں کے ساتھ ساتھ سوچنے پر بھی مجبور کردیا۔ شاندار۔ خدا قبول کرے

  1. By on February 15, 2011 at 10:51 am

Leave a Reply

You can use these HTML tags and attributes: <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>